بنیادی صفحہ / ادبی خبریں / انڈونیشیا کی تہذیبی روایات دیگر ریاستوں کے لیے رول ماڈل / پروفیسر امین عبداللہ

انڈونیشیا کی تہذیبی روایات دیگر ریاستوں کے لیے رول ماڈل / پروفیسر امین عبداللہ

IMG_20160721_155925انڈونیشیا کی تہذیبی روایت نہایت متمول ہے اورعرصہ دراز سے تکثیریت پر مبنی رہی ہے۔مختلف سماجی و رفاہی تنظیموں ،جمہوری اداروں اورمسلم وغیر مسلم دانشوروں نے اس کے تہذیبی عناصر کو تقویت پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ ‘‘ان خیالات کا اظہار پروفیسر محمد امین عبداللہ ،سابق وائس چانسلر،اسٹیٹ اسلامک یونیورسٹی ،انڈونیشیا نے شعبہ اسلامک اسٹڈیز ،جامعہ ملیہ اسلامیہ میں پیش کردہ اپنے توسیعی خطبہ میں کیا۔خطبہ کا موضوع ’’سماجی اور اسلامی علوم:معتدل اور ترقی پسند مسلم ذہن کی تشکیل انڈونیشیا کے تناظر میں ‘‘تھا۔ انہوں نے بتایا کہ چار بنیادیں ہیں جن پر ہم انڈونیشیا میں ایک بہتر کثیر مذہبی معاشرے کی تشکیل کر نے کی کوشش کر رہے ہیں۔اول تکثیریت کو قبول کرنا،دوسراملکی قانون کا احترام،تیسرا سول سوسائیٹی کو مؤثر بنانااور چوتھا اعلیٰ اسلامی تعلیم کو فروغ دینا۔
انہوں نے مزید کہا کہ انڈونیشیا اگرچہ مسلم اکثریت کا ملک ہے لیکن وہ نہ تو اسلامک اسٹیٹ ہے اور نہ ہی سیکولر اسٹیٹ ، بلکہ ’پنج شیل‘ اصولوں پر اس ملک کی تشکیل ہوئی ہے،جس میں تمام مذاہب کے ماننے والوں کو مساویانہ حقوق حاصل ہیں۔
پروفیسر امین عبداللہ نے سامعین کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے ریسرچ وتحقیق کی اہمیت پر زور دیا اور انہوں نے کہا کہ ہماری یونیورسٹیاں ایسی تعلیم گاہیں ہیں جہاں صرف لیکچر کے ذریعہ تعلیم ہوتی ہے جب کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ تعلیم یا سیکھنے کے عمل میں استاد لیکچر کے ساتھ طلبہ کی مشارکت اور بحث و تحقیق کا جذبہ بھی شامل ہو۔
پروفیسرمحمد اسحٰق نے پروگرام کی صدرات کرتے ہوئے مہمانوں کے سامنے شعبہ اسلامک اسٹڈیز اورجامعہ ملیہ اسلامیہ کا تعارف کرایا انہوں نے بتایا کہ جامعہ ہمارے ملک میں جدوجہد آزادی کی دین ہے اور ملک کی کثیر ثقافتی و مذہبی اقدار کی امین ہے۔
پروگرام کا آغاز شعبے کے ریسرچ اسکالر محمد تحسین زماں کی تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ڈاکٹر محمد مشتاق تجاروی، کنوینر توسیعی خطبات، نے نظامت کے فرائض انجام دیے۔اس پروگرام میںصدر شعبہ اسلامک اسٹڈیز پروفیسر اقتدار محمد خان کے ساتھ شعبے کے دیگر اساتذہ پروفیسر فریدہ خانم ،پروفیسر سید شاہد علی،جناب جنید حارث ،ڈاکٹرمحمد ارشد،ڈاکٹر عمر فاروق،ڈاکٹر وارث مظہری ،ڈاکٹر خورشید آفاق، ڈاکٹر نجم السحر، محمداسامہ کے علاوہ ریسرچ اسکالرس،ایم اے اور بی اے کے طلبہ و طالبات نے شرکت کی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*